Home > Breaking News > بے نظیر میڈیکل کالج میرپور کی یکم جنوری سے جاری ہڑتال چھٹے روز بھی جاری رہی۔ سٹاف ایکشن کمیٹی نے مطالبات کی منظوری تک ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان

بے نظیر میڈیکل کالج میرپور کی یکم جنوری سے جاری ہڑتال چھٹے روز بھی جاری رہی۔ سٹاف ایکشن کمیٹی نے مطالبات کی منظوری تک ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان

چکسواری (قیصرعزیزسے)محترمہ بینظیربھٹو شہید میڈیکل کالج میرپور میں یکم جنو ر ی 2018ء سے ملازمین کا شدید احتجا ج جاری ہے۔ سٹاف ایکشن کمیٹی نے اعلیٰ حکام کو آٹھ نقاتی چارٹر آف ڈیمانڈ پیش کیا تھا جن میں “تمام سٹاف کی نارمل میزانیہ پر منتقلی، ہیلتھ الاؤنس، اسٹیبلشمنٹ الاؤنس، بگ سٹی الاؤنس، محکمہ جاتی ترقیاں جو کالج ملازمین کو نہ دی گئیں، TOR/SOPs کا قیام عمل میں لانا، سروس سٹرکچر اور تنخواہوں کی بروقت ادائیگی” ہے، شامل ہیں۔تفصیلات کے مطابق میرپور میں قائم محترمہ بے نظیر بھٹو شہید میڈیکل کالج میں پاکستان ٹیسٹنگ سروس (PTS) کا ٹیسٹ کوالیفائی کرنے کے باوجود گزشتہ چھے سال سے کنٹریکٹ پر کام کرنے والے سٹاف کا نارمل میزانیہ پر منتقلی اور دیگر دیرینہ مسائل کے حل کے لیے یکم جنوری 2018ء سے شدید احتجاج جاری ہے۔ میڈیکل کالج سٹاف کی ایکشن کمیٹی نے اپنے مطالبات کی منظوری کے لیے وزیر اعظم آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر سمیت دیگر اعلی حکومتی عہدے داران کو متعدد بار تحریری درخواستیں دیں، اس کے باوجود تا حال مطالبات تسلیم نہیں کیے گئے۔ یاد رہے میڈیکل کالج کے سٹاف کی طرف سے حکومت کو تحریری درخواست میں مطالبات کی منظوری کے لیے 18 دسمبر 2017ء کی ڈیڈ لائن دی گئی تھی جس کے باوجود حکومت ٹس سے مس نہ ہوئی۔چھے ، چھے ماہ تک تنخواہوں کی بندش برداشت کرنے والے پڑھے لکھے اور ہنر مند افراد کا مستقبل داؤ پر لگانے میں نہ حکومت نے اور نہ ہی کالج انتظامیہ نے کوئی کسر چھوڑی۔ جو ملازمین پوری قوم کے بہتر مستقبل کے لئے اپنی خدمات سر انجام دے رہے ہیں ان کے اپنے گھروں میں فاقوں کا راج ہے۔ ان کے اپنے بچے بارہا مرتبہ سکولوں سے نکالے جا چکے ہیں چونکہ فیس کی بروقت ادائیگی ان کے بس سے باہر ہے۔جبکہ ریاستی حکومت اس سلسلے میں بالکل بے بس نظر آتی ہے، تعلیمی اداروں کی ایسی بد نظمی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔ ایسے ہی معاشی مسائل سے دو چار میڈیکل کالج کے ڈاکٹرز نے بھی احتجاج کا عندیہ دے دیا ہے۔ ریاستی تعلیمی اداروں میں سے ایک بڑا تعلیمی ادارہ تباہی کے دہانے پر پہنچ چکا ہے۔

Share this News!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

shares