Home > Mirpur News > چکسواری جلسہ :سردار سکندر حیات خان نے آج مسلم لیگ ن کے خلاف چارج شیٹ پیش کر کے اس بات پر اعتراف کیا کے آزاد کشمیر میں ایک مکمل منصوبہ بندی اور دھاندلی کے ذریعے مسلم لیگ ن کی حکومت قائم ہوئی ۔لطیف اکبر

چکسواری جلسہ :سردار سکندر حیات خان نے آج مسلم لیگ ن کے خلاف چارج شیٹ پیش کر کے اس بات پر اعتراف کیا کے آزاد کشمیر میں ایک مکمل منصوبہ بندی اور دھاندلی کے ذریعے مسلم لیگ ن کی حکومت قائم ہوئی ۔لطیف اکبر

چکسواری (قیصر عزیزسے)صدر پاکستان پیپلز پارٹی آزاد کشمیر چودھری لطیف اکبر نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی کی تاریخ قربانی دینے والی پارٹی میں شمار ہوتا ہے۔ اس کا قائد پہلے قربانی پیش کرتا ہے بعد میں کارکن کی بھاری ہوتی ہے۔ ایک طویل جدوجہد کے نتیجے میں پارٹی کو یہ مقام ملا ہے 1967 ء میں شہید ذوالفقار علی بھٹو نے مزدور کسان اور غریب کے لئے اس پارٹی کی بنیاد رکھی جو اپنی پچاس سالہ کارکردگی کی بنیاد پر 5 دسمبر کو پریڈ گراؤنڈ اسلام آباد میں یوم تاسیس منانے جا رہی ہے۔ ہماری پچاس سالہ تاریخ میں قیادت سے لے کر کارکنوں تک جام شہا دت نوش کیا ذوالفقار علی بھٹو شہید اور محترمہ شہید رانی نے اپنی جانوں کی قربانی پیش کر کے یہ بات ثابت کی کے پارٹی کارکن کی قربانی سے پہلے خود قربانی دینی ہے۔ہماری پچاس سالہ تاریخ میں قیادت سے لے کر عام کارکن سرخرو ہوا۔ پارٹی قربانیا ں دینے والی جماعت1967 سے آج پچاس سال مکمل ہونے پر 5 دسمبر پریڈ گراؤنڈ اسلام آباد پچاس سال کی پارٹی کی کارگزاری پیش کریں گے۔ تمام کارکنوں کو آنے کی خصوصی دعوت اور اپیل ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے چکسواری میں پیپلز یوتھ آرگنائزیشن کے مرکزی چےئرمین ضیاء القمر کی صدارت میں منعقدہ کنونشن میں بحثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔
انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر کے اندر گزشتہ انتخابات میں منظم دھاندلی کے ذریعے ایک کٹھ پتلی حکومت قائم ہوئی جس کا ایجنڈا تقسیم کشمیر ہے۔ آج مسلم لیگ (ن)آزاد کشمیر کے مرکز ی رہنما و سابق وزیر اعظم آزاد کشمیر سردار سکندر حیات خان نے اس بات کا برملا اعتراف کیا ہے کہ سابق دور حکومت میں آصف کرمانی ، پرویز رشید اور برجیس طاہر کے ذریعے منظم دھاندلی کر کے پیسے کی تقسیم سے دھاندلی کا آغاز ہوا۔ آج سردار سکندر حیات مذہبی بنیادوں پر تقسیم کشمیر گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کی بات کر رہا ہے۔ جو ایک سوچی سمجھی سازش ہے انہوں نے کہا کہ سردار سکندر حیات خان نے آج مسلم لیگ ن کے خلاف چارج شیٹ پیش کر کے اس بات پر اعتراف کیا کے آزاد کشمیر میں ایک مکمل منصوبہ بندی اور دھاندلی کے ذریعے مسلم لیگ ن کی حکومت قائم ہوئی ۔ ہم سردار سکندر حیات سے مطالبہ کرتے ہیں کہ پہلے وہ اپنے بیٹے سے وزارت سے استعفیٰ دلوائے ہمیں علم ہے کہ بھتہ نہ ملنے پر سردار سکندر حیات نے یہ بیان جاری کیا۔ اگر صبح تک بھتہ مل گیا تووہ پرانی تنخواہ پر کا م شروع کر دے گا۔ سکندرحیات کے بیان سے کشمیری قیادت کو سخت اذیت پہنچی ہے۔ ہم پوری کشمیری قیادت سے اپیل کرتے ہیں کہ سردار سکندر حیات خان کے بیان کا نوٹس لیا جائے ہم یہ بھی مطالبہ کرتے ہیں کہ پاکستان کے اندر سال2018 ء کو ہونے والے انتخابات کے ساتھ ہی آزاد کشمیر کے اندر غیر جانبدارانہ حکومت قائم کر کے نئے انتخابات کروائے جائیں۔ انہوں نے آزاد کشمیر کے صدر پر بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ وہ ایک کم ترین شخص ہیں۔ جو مسئلہ کشمیر کو موثر انداز میں کسی بھی فورم پر پیش نہیں کر سکااور بیرون ممالک کے دورے محفل سیر تقریح اور ٹی اے ڈی اے کے علاوہ کچھ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ چکسواری ایک ذرخیز خطہ ہے۔ جس نے چودھری عبدالمجید جیسی شخصیت کو جنم دیا۔ جس نے چکسواری کے نام نہاد ٹھیکیداروں ،جاگیرداروں کو للکارااور سات مرتبہ ممبر اسمبلی منتخب ہو کر وزارت اعظمی پر فائز ہوا۔چودھری لطیف اکبر نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ بیرون ملک کشمیرویوں کو ووٹ کا حق دیا جائے ۔مردم شماری اور ووٹر لسٹ میں ان کا نام شامل نہ کر کے ذیادتی کی گئی ۔کنونشن سے سابق سنئیر نائب صدر چودھری پرویز اشرف ، سردار جاوید ایوب ایڈووکیٹ، سابق وزیر تعلیم محمد مطلوب انقلابی ،محترمہ نبیلہ ایوب ایڈووکیٹ، سابق مشیر چودھری محمد الیاس، سابق لارڈ میر ثالث کیانی ، صاحبزادہ ذوالفقار علی ، قاضی محمود احمد ، چودھری ادریس شان ایڈووکیٹ ، چودھری مشتاق ایڈووکیٹ ، حاجی سوارخان ، الحاج غلام رسول عوامی، راجہ امتیاز حسین ایڈووکیٹ ، سدرہ لطیف ایڈووکیٹ ، عبدالشکور صدیقی ، سرمد شریف،چودھری سفیان ایوب ، چودھری قاسم مجید، چودھری فیصل برکت، داؤد احمد بندوری، تنویر احمد ،چودھری لقمان لیاقت،پہلوان اسامہ صدیق ، چودھری منشی خان ، چودھری محمد اقبال ڈھلوی ، صدر عبدالرشید، راجہ خلیل یوسف ، حاجی محمد عظیم اور قاسم مجید نے بھی خطاب کیا ۔ جبکہ تلاوت کلام پاک کی سعادت مولانا حق نواز صدیقی نے حاصل کی۔ نظامت کے فرائض سابق صدر پریس کلب چکسواری یاسر ممتاز چودھری نے سر انجام دیے۔

Share this News!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

shares